بوڑھی خاتون سے رحم دلی کا مظاہرہ: پلمبر کے لیے 99 ہزار ڈالرکےعطیات

لندن: نیکی کبھی ضائع نہیں جاتی اور ایسا ہی ایک واقعہ برطانوی پلمبر کے ساتھ بھی ہوا جس نے 91 سالہ بوڑھی خاتون کے گھر میں پلمبنگ کا کام بلامعاوضہ کردیا جسے پوری دنیا میں سراہا گیا ہے۔

جیمز اینڈرسن نے کینسر کی شکار ایک بوڑھی خاتون کا بوائلر ٹھیک کردیا اور ان سے کوئی معاوضہ بھی نہیں لیا۔ اس خاتون کی عمر 91 برس تھی۔ جب یہ خبر سوشل میڈیا پر مشہور ہوئی تو معلوم ہوا کہ اینڈرسن ایک چھوٹی سی تنظیم بھی چلا رہے ہیں جو بوڑھے، بے سہارا اور معذور افراد کی مدد کرتی ہے۔ اس خبر سے متاثر ہوکر لوگوں نے انہیں 99 ہزار ڈالر کی رقم عطیہ کی ہے تاکہ وہ خوش اسلوبی سے فلاح و بہبود کا کام کرسکیں۔

ان کے تمام صارفین جیمز اینڈرسن کو ’پلمبر کے لباس میں فرشتہ‘ کہتے ہیں۔ اسی بنا پر لوگوں نے 99 ہزار ڈالر کی رقم عطیہ کردی ہے اور اب اس کے بدلے اینڈرسن نے پورے ملک میں مفت سہولیات فراہم کرنے کا اعلان کیا ہے۔

2017 میں جیمز اینڈرسن نے شدید نقصان کے بعد اپنا ذاتی کاروبار بند کردیا تھا اور ’’ڈیفر‘‘ نامی ایک غیرنفع بخش کمپنی بنائی جو ضرورت مندوں کی مدد کررہی ہے۔ اس کے بعد سے وہ لنکاشائر میں 2000 ایسے افراد کو انتہائی بارعایت پلمبنگ سروس فراہم کرچکے ہیں جو کسی بھی وجہ سے اس کا خرچ برداشت نہیں کرسکتے۔ لیکن اس کے لیے کراؤڈ فنڈنگ اور لوگوں کے عطیات کی ضرورت ہوتی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں